Call Us Today! +92-321-5088855
kitabandqalam@gmail.com

اس ویب سائیٹ پر جو میری ذاتی تحریریں ہیں وہ میرے تجربات، مشاہدات اور خیالات پر مبنی ہیں۔ کسی اور کی کسی بھی قسم کی تحریر سے مطابقت محض اتفاقیہ ہو گی۔ ابن نیاز

آپ کو کوئی کتاب اپنے گھر بیٹھے 18 سے 25 فئصد ڈسکاؤنٹ پر چاہیے، تو رابطہ کریں۔ اسلامی کتابوں کا ڈسکاؤنٹ 18 فیصد ہے۔ مارکیٹ میں موجودگی شرط ہے. یہ تصویریں صرف مثال کے لیے ہیں۔

اسلامی شاعری

لمس
November 8, 2018

اک احساس سا ہر پل
سپردگی کا عالمِ حصار میں
میرے ساتھ رہتا ہے
کہ دعاؤں کا حصار
مجھے گھیرے رکھتا ہے..
میں وسیلۂ ظفر پر نکلوں
یا تلاشِِ رزق میں بھٹکوں
میرے ماتھے پہ
میری ماں کے بوسے کا
مقدس لمس
میرے ساتھ رہتا ہے..

انصاف بک گیا ہے
November 8, 2018

انصاف بک گیا ہے
بن مول بک گیا ہے
ہم نشینوں کی سنگت میں
دام بہت لگے تھے
مگر قاضی کا یہ دعوٰی تھا
انصاف کے ترازو کو
ہر گز نہ جھکنے دے گا
انصاف کا تقاضا تھا
گستاخ کی سیاہ زبان کو
حلق سے کاٹ دیتے
پھر اپنی کرسی کو
سلام آخری کر دیتے
مگر صاحب ناممکن ہوا
دربارِ رسالت میں
کیا منہ دکھاؤ گے
حوضِ کوثر پہ
جامِ عشق کیسے پاؤ گے
زوال کا اک رستہ ہے
پہلے نے بھی ڈھونڈا تھا
قاضی نے بھی ڈھونڈا ہے
کرسی نے بھی دیکھا ہے
وقت اب دکھلائے گا

عشق بولے لا کا نعرہ
August 28, 2016

عشق بولے لا کا نعرہ

میں کہوں اے اللہ تو

عشق پوچھے اب کیا کرنا

میں بولوں فنا فی تو

دن لگیں، رت جگیں

قیام میرا اور سجدہ تُو

دھڑکن دھڑکن اللہ اللہ

جسم و جاں میں رہتا تُو

عشق بینا ہی سب دیکھے

ظاہر میرا باطن تُو

دنیا مجھ کو گھیرے ہے

بچائے مجھ کو اللہ تو

جھوٹا کوئی سچا کوئی

ابلیس بولے مارے تو

عشق میں ڈوب کر جانا ہے

ناؤ میں بہتا دریا تو

چرند پرند سب کی تسبیح

اللہ میرے اللہ تو

ظلمت ساری چھٹتی ہے

نور میں پھیلا تو ہی تو

ہفت اقلیم کی دولت ساری

چار نہیں ہشت پہلو تو

ظاہر خود کو کرنا چاہا

نور نبی کا بن گیا تو

جنت دوزخ تیرے سب

عشق بولے ہے اس کا تو

تیرے پیچھے میں جو چل دوں

دنیا میری سب میرا تو

اعجاز کہاں سے آئے ہو

فانی ہے کہ خاکی تو

************

نعت رسول مقبول ﷺ
May 18, 2016

نعت رسول مقبول ﷺ

آپ کی زلفوں سے جو گرا وہ پانی کیا ہوگا
زم زم ہو گا یا پھر آب شفا ہو گا

جو کرن چمکی ہو گی آپ کے مسکرانے سے
آفتا بھی اسے دیکھ کر پھر چمکا ہو گا

آپ کے پسینے کی وہ معطر مہک ہو گی
مشک و زعفران میں ڈھل کر جو پھیلا ہو گا

جلنے والو میرے عشق سے جلتے کیوں ہو؟
دل کو جھکایا ہے سر بھی اب سرِدارا ہو گا

اور تو کچھ نہیں اعجازّ تیرے پاس مگر اتنا
خاکِ پائے مصطفٰیﷺ نے تجھے اپنایا ہو گا
************

نعتِ رسول ﷺ۔۔۔ عشق کے سمندر میں ہم ڈوبنے نکلے ہیں۔۔
April 9, 2016

نعت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عشق کے سمندر میں ہم ڈوبنے نکلے ہیں۔۔
مدنی تیرے شہر میں چمکتے ہیں۔۔
اُن ہواؤں میں خوشبو ہے بسی۔۔
جن فضاؤں میں درود پڑھنے لگے ہیں۔۔
چار سو دیکھا نہیں سکون ملا۔۔
حرا کے غار سے جا کر ہم ملے ہیں۔۔
ذکرِ خدا ہو اور سلام اُن پر۔۔
ہائے کیسے ارمان مچلنے لگے ہیں۔۔
آپ سے مل گئے پھر دنیا کیسی۔۔
جینے کے کہاں پیمانے دھرے ہیں۔۔
میرا مرشد، میرا رہبر اور حکم حاکم۔۔
سب نشاں اک تیری ذات ہی سے ہیں۔۔
سر پٹک کر مر جاؤں گا ایسے۔۔۔
ہر کفن پر کچھ داغ گر بنے ہیں۔۔
میں خطا کار اور ریاکار سہی۔۔
اعجاز اور احمد آپس میں ملے ہیں۔۔۔